30-03-2018

پشاور ہائی کورٹ نے آرمی پبلک سکول پشاور کے سانحہ کی تحقیقات منظر عام پر لانے یا نہ لانے کےلئے صوبائی حکومت کی رائے معلوم کرنے کےلئے تحریری جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس قیصر رشید اورجسٹس محمد ایوب پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ سولہ دسمبردو ہزار چودہ میں اے پی ایس پر حملے میں درخواست گزار کے دو بچے سیف اللہ درانی اور نور اللہ درانی شہید ہوئے تاہم آج تک انہیں سانحہ کی تحقیقات سے آگاہ نہیں کیا گیا اس لئے فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ سانحہ اے پی ایس کی تحقیقاتی رپورٹ منظر عام پر لائی جائے ۔

فاضل عدالت نے صوبائی حکومت کی اس بارے میں رائے معلوم کرنے کےلئے تحریری جواب طلب کرکے سماعت ملتوی کردی ۔