24-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا احتساب کمیشن کے قانون میں ترامیم کے بعد پرانے ملازمین کو نکالنے کے خلاف دائر رٹ درخواست پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے صوبائی حکومت کو ان ملازمین کی برطرفی سے روک دیا ہے ۔

جسٹس روح الاآمین خان اور جسٹس سید افسر شاہ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے احتساب کمیشن کے تفتیشی آفیسر سیف اللہ سمیت بارہ ملازمین کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ خیبر پختونخوا احتساب کمیشن میں ترامیم کے بعد کمیشن کے پرانے ملازمین کو نکالا جا رہا ہے جو کہ غیر قانونی اور غیر آئینی اقدام ہے لہذا اس اقدام کو کالعدم قرا ر دیا جائے ۔

فاضل عدالت نے حکم امتناعی جاری کرکے ان کی برطرفی روک دی اور متعلقہ حکام سے جواب طلب کر کے سماعت ملتوی کردی ۔