16-11-2017

فاٹا ٹربیونل نے قرار دیا ہے کہ اسسٹنٹ پولیٹکل ایجنٹ کو سات سال سے زائد قید بامشقت دینے کا اختیار نہیں ہے ۔

 فاٹا ٹربیونل کے چیئرمین سنگ مرجان اور ممبران حسین زادہ اور عاطف نذیر نے حمزہ نامی قبائلی کی جانب سے دائر اپیل کی سماعت کی جس میں ٹربیونل کو بتایا گیا کہ درخواست گزار کو سیکورٹی فورسز نے حراست میں لیا اور سترہ ماہ قبل لنڈی کوتل کی پولیٹکل انتظامیہ کے حوالے کیا گیا جبکہ اس پر الزام عائد کیا گیا کہ اس کے کالعدم تنظیموں کےساتھ روابط ہیں جس پر اسسٹنٹ پولیٹکل ایجنٹ لنڈی کوتل نے اسے سولہ سال قید بامشقت کی سزا سنائی حالانکہ اے پی اے کے ساتھ سات سال قید بامشقت سے زائد کا اختیارنہیں لہذا اس کی سزا کالعدم قرار دی جائے ۔ ٹربیونل نے دلائل مکمل ہونے پر ملزم کی  اپیل منظور کرتے ہوئے اس کی سولہ سال  قید بامشقت کی سزا کالعدم قرار دے دی ۔