03-05-2017

چیف جسٹس  پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ اداروں میں ایڈہاک ازم کی کوئی گنجائش نہیں ہے اور جو کسی کے حکم کا محتاج ہو وہ آزادانہ کام کیسے کرے گا۔

انہوں نے یہ ریمارکس اسلام آباد کے اسپتالوں میں بے ضابطگیوں سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت  کے دوران دیئے ۔

عدالت کو بتایا گیا کہ پمز، پولی کلینک سمیت دیگر بڑے ادارے سربراہان کے بغیر چلائے جا رہے ہیں جبکہ  تمام اداروں میں عارضی طور پر سربراہان لگائے گئے ہیں جبکہ مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف بھی ہوا ہے ۔

عدالت نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل کوآئندہ ہفتے تک جواب دینے  کا حکم دیتے ہوئے اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے اکاوٴنٹ کی انکوائری پر جاری حکم امتناعی کا ریکارڈ طلب کرلیا جبکہ کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی ۔