30-06-2017

سپریم کورٹ نے انسانی سمگلنگ میں ملوث ملزم کی ضمانت منسوخی کے لئے دائر درخواست خارج کرتے ہوئے آبزرویشن دی ہے کہ غیر قانونی طریقے سے بیرون ملک جانے والے بھی شریک جرم ہوتے ہیں ۔

قائمقام چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ اور جسٹس دو ست محمد خان پر مشتمل سپریم کورٹ کے دورکنی بنچ نے دائر درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ راولپنڈی کے رہائشی سجاد غیر قانونی طریقے سے جاتے ہوئے ایران میں جاں بحق ہو گیا تھا اور سجاد کے ورثاء نے ایجنٹ عمران علی کے خلاف مقدمہ درج کرایا تھا تاہم عدالت نے اسے ضمانت پر رہاکیا ہے لہذا ملزم کی ضمانت منسوخ کی جائے ۔

دوران سماعت قائمقام چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ غیر قانونی طریقے سے باہر جانا بھی جرم ہے ، دونوں جرم کرنے والے بعد میں مدعی اور ملزم بن جاتے ہیں ۔ عدالت نے کہا کہ رشوت دینے والا نہیں ہوگا تو لینے والا کہاں سے آئے گا اور اگر مقدمہ میں ریاست مدعی ہو تو اطلاع دینے والا ضمانت منسوخ نہیں کراسکتا ۔