06-04-2017

پشاور ہائی کورٹ نے لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور میں ڈاکٹر ایاز الحق کو بطور اسسٹنٹ پروفیسر نیورالوجی تقرری کے احکامات معطل کرکے چیئرمین بورڈ آف گورنرز ایل آر ایچ پشاور سے جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس لعل جان خٹک اورجسٹس قلندرعلی خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ لیڈی ریڈنگ ہسپتال ایم ٹی آئی میں اسسٹنٹ پروفیسر نیورالوجی کی پوسٹ مشتہر ہوئی تھی جس کےلئے درخواست گزاروں نے درخواستیں دیں اور انہیں انٹرویو کے لئے شارٹ لسٹ کیا گیا تاہم بعد میں اس پوسٹ پر ڈاکٹر ایاز الحق کو تعینات کیا گیا جو انٹرویو کے موقع پر ملک سے باہر تھا جبکہ درخواست گزاروں کا ان سے اس شعبے میں دو سال سے زائد کا تجربہ بھی ہے لہذا ان کی تقرری کالعدم قرا ر دی جائے ۔

عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد چیئرمین بورڈ آف گورنرز ایل آر یچ سے جواب طلب کر کے سماعت ملتوی کر دی ۔