28-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے  خیبر ٹیچنگ ہسپتال پشاور کے میڈیکل افیسر کا محکمہ صحت تبادلہ روکتے ہوئے ڈی جی ہیلتھ سمیت متعلقہ حکام سے جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس سید افسر شاہ اورجسٹس یونس تہیم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے  دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار فضل الرحمان  خیبر ٹیچنگ ہسپتال میں میڈیکل آفیسر تعینات ہیں تاہم جب یم ٹی آئی ایکٹ لاگو ہوا تو انہیں آپشن دیا گیا کہ وہ انسٹیٹیوشنل ایمپلائر بننا چاہتے ہیں یا سول سرونٹ رہنا چاہتے ہیں جس پر درخواست گزار نے انسٹیٹیوشنل  ایمپلائر  رہا تاہم ڈائریکٹر ایم ٹی آئی نے بائیس فروری دو ہزار سترہ کو اس کے تبادے کے احکامات جاری کرتے ہوئے اسے محکمہ صحت رپورٹ کرنے کا کہا ہے جبکہ ایم ٹی آئی ایکٹ کے تحت اسے تبدیل نہیں کیاجا سکتا لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ ان کے تبادے کے احکامات کالعدم قرار دیئے جائیں ۔h