23-10-2017

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی نے کہا ہے کہ وکلاء اپنی پیشہ وارانہ ذمہ داری سے پہلو تہی نہ کریں تاکہ مقدمات میں غیر ضروری تاخیر نہ ہو جبکہ سستا اور فوری انصاف ہمارا ہدف ہونا چاہئے کیونکہ انصاف میں سستی ہمیں پستی کی طرف لے جائے گی ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ نے کہا کہ بنچ اور بار کے موثر تعاون کی بدولت مقدمات جلد نمٹائے جا سکتے ہیں۔ تحصیل کاٹلنگ بار ایسوسی ایشن کے وکلاء سے اپنے خطاب میں چیف جسٹس یحیی آفریدی نے اعلان کیا کہ کاٹلنگ کو جلد مستقل ایڈیشنل سیشن جج فراہم کریں گے ۔دورہ کاٹلنگ کے موقع پر چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ نے وکلاء رہنماوں کی جانب سے وکلاء بار روم کے مسائل  سنے اور موقع پر وہاں کمپیوٹر آپریٹر کی تعیناتی کے احکامات جاری کرتے ہوئے بار روم کےلئے فرنیچر اور لائبریئری کے اجراء کی منظوری دی۔