16-05-2017

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی نے کہاہے کہ بنچ اور بار انصاف کی فراہمی میں اہم کردار ادا کررہے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ بنچ سے کرپشن کے خاتمے کےلئے مہم کا آغاز کردیا گیا ہے اور ضرورت اس امر کی ہے کہ بار سے بھی ایسے عناصر کے خاتمے کےلئے ٹھوس اقدامات شروع کئے جائیں ۔

پشاور ہائی کورٹ بار ، خیبرپختونخوا بار کونسل کے اراکین اور صوبہ بھر کے بار ایسوسی ایشنوں کے صدور سے خطاب کرتےہوئے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی نے کہا کہ پشاور ہائی کورٹ میں اس وقت مختلف ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کے ساتھ ساتھ بڑی اصلاحات بھی کی جا رہی ہیں جس سے لوگوں کو بروقت اور فوری انصاف کی فراہمی کا عمل مکمل ہوگا۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ کا کہنا تھا کہ بنچ کے ساتھ ساتھ بار بھی انصاف کی فراہمی میں اہم کردار ادا کرتی ہیں اس لئے وکلاء برادری پر یہ لازم ہے کہ وہ اس حوالے سے اپنا کردار ادا کریں ۔

 انہوں نے کہا کہ کسی بھی مسئلے کی صورت میں وکلاء انہیں اگاہ کیا جائے اور نوٹس میں یہ بات لائی جائے اور وہ پھر بھی مطمئین نہ ہوں تو پھر وہ اپنے فیصلے کریں کیونکہ یہ ایک اصول ہے کہ تمام مسائل کا حل گفت و شنید سے ممکن ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی کا مزید کہنا تھا کہ ججز کی کمی کو پورا کرنے کےلئے حکومت سے پہلے ہی بات چیت جاری ہے اور انچاس سول ججز کی آسامیوں کو پر کرنے کےلئے پبلک سروس کمیشن کو لکھا گیا ہے ، اسی طرح ججز کی تقرری اور تبادلوں میں شفافیت لائی گئی ہے اور تمام تبادلے میرٹ پر کئے جا رہے ہیں۔