December 16, 2018

Khyber Pakhtunkhwa Judicial Academy, Peshawar
BROADCAST TIMING

Morning : 08:00AM to 11:00AM | Evening : 03:00PM to 07:00PM
Call Now: 091-9211654 | Email us: info@radiomeezan.pk

بڑھتی آبادی پر منعقدہ سمپوزیم سے چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کاخطاب

06-12-2018

چیف جسٹس  پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ اگر بڑھتی ہوئی آبادی پر کنٹرول نہ کیا گیا تو آئندہ 30 سال میں یہ بڑھ کر 45 کروڑ ہو جائے گی۔

 اسلام آباد میں بڑھتی آبادی پر منعقدہ سپموزیم سے خطاب میں چیف جسٹس  پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ ملک میں وسائل بہت محدود ہیں لیکن آبادی کی شرح خطرناک حد تک بڑھ گئی ہے، آبادی میں اضافہ ہو رہا ہے، آبادی اسی تناسب سے بڑھتی رہی تو 30 سال بعد 45 کروڑ ہو جائے گی، آبادی کو کنٹرول کرنا ہوگا، یہ پاکستان کے بقاء کی علامت ہے، ہمیں آبادی پر کنٹرول کے معاملے کو سنجیدگی سے لینا چاہیے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اتنا وقت گزر گیا، ہم نے قوانین کو اپ ڈیٹ نہیں کیا، سول جج 6 گھنٹے میں روزانہ 60 مقدمات کی سماعت کرتا ہے، موجودہ صورتحال کو سامنے رکھتے ہوئے ججز کی تعداد بڑھانا ہو گی۔انہوں نے کہا کہ ہمیشہ تسلیم کیا ہے کہ پارلیمنٹ سپریم ہے، قانون سازی کرنا پارلیمنٹ کا کام ہے، اگر آئین کے بعد کوئی ادارہ سپریم ہے تو پارلیمنٹ ہے، اب وقت آ گیا ہے کہ جو ہمارا اصل کام ہے اس پر توجہ دی جائے۔

Related posts