30-03-2018

پشاور ہائی کورٹ نے چمکنی پشاور میں بی آر ٹی منصوبے میں شامل فلائی اوور کے خلاف شہری کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کردی ہے۔

جسٹس قیصر رشید اور جسٹس محمد ایوب خان پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ  کے دو رکنی بنچ نے شہری مدثر احمد خان کی جانب سے دائر درخواست  کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ چمکنی میں بی آر ٹی منصوبے کے لیے ایک فلائی اوور  بن رہا ہے جو کہ منصوبے میں شامل نہیں ہے اور خدشہ ہے کہ اگر یہ فلائی اوور بن جائے تو وہاں پر موجود راستہ بند ہوجائےگا۔

دوران سماعت   ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت کو بتایا کہ یہ منصوبہ بی آر ٹی کا حصہ ہے جوکہ باقاعدہ طور پر منظور ہوا ہے۔ منصوبے پر کام جاری ہے اور اب یہ منصوبہ آخری مراحل میں ہے جبکہ اس منصوبے کے خلاف رٹ پہلے ہی پشاور ہائی کورٹ خارج کرچکی ہے اور منصوبے کو قانونی قرار دیا گیا ہے۔

عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر شہری کی دائر رٹ درخواست خارج کردی۔