29-03-2018

سپریم کورٹ نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت صدیقی کی سپریم جوڈیشل کونسل میں ان کے خلاف زیر سماعت شکایت کی بند کمرہ کی بجائے کھلے عام کارروائی کرنے سے متعلق جبکہ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس فرخ عرفان خان کی سپریم جوڈیشل کونسل میں ان کے خلاف زیر سماعت شکایت کی سماعت میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس وممبر سپریم جوڈیشل کونسل جسٹس انور کاسی کی موجودگی پر اعتراض اور شکایت کی کھلے عام سماعت سے متعلق آئینی درخواستوں کی سماعت کے دوران فریقین کے وکلاء اور عدالتی معاونین کے دلائل مکمل ہونے کے بعدفیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔

 جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں جسٹس مشیر عالم ، جسٹس سردار طارق مسعود اور جسٹس مظہر عالم میاں خیل پر مشتمل سپریم کورٹ کے پانچ رکنی لارجر بینچ نے  آئین کے آرٹیکل 184(3) کے تحت دائر کی گئی درخواستوں کی سماعت کی ۔

عدالت نے دلائل مکمل ہونے کے بعد ان آئینی درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔