22-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے لاچی کوہاٹ کی  پرائمری سکول خاتون ٹیچر  کو ہراساں کرنے کے الزام میں بلدیاتی نمائندوں کے خلاف مقدمہ میں متعلقہ  دفعات شامل کرنے کےلئے دائر رٹ پر آئی جی خیبر پختونخوا کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ  جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے لاچی کوہاٹ پرائمری سکول ٹیچر رخسار کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزارہ سرکاری سکول ٹیچر ہے اور پندرہ مئی دو ہزار پندرہ کو نائب ناظم تحصل درتپی لاچی کوہاٹ  نذر محمود ، بنارس اور غفران غیر قانونی طور پر سکول میں داخل ہوئے اور درخواست گزارہ کی موبائل پر تصاویر بنائیں اور بعد میں ان تصاویر کو سوشل میڈیا پر جاری کیں اور اسے ہراساں کرنے کی کوشش کی جبکہ بعد میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج  کے حکم پر ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تاہم مقدمے میں متعلقہ دفعات درج نہیں کی گئیں اور پویس نے ملزموں کو بچانے کی کوشش کی ہے ۔