10-10-2017

صوبہ خیبر پختونخوا میں ڈینگی اور کانگو سمیت دیگر خطرناک اور مہلک بیماریوں کی نشاندہی او ر انہیں واجب الاطلاع قرار دینے کیلئے والدین ٗ خاندان کے سرپرست ٗ دیگر افراد اور سرکاری و نجی تمام اداروں کو پابند بنانے سے متعلق جاری آرڈیننس کو صو با ئی اسمبلی اجلاس میں پیش کر دیا گیا ہے۔

آرڈیننس صوبائی وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی نے پیش کیاجس کے تحت خیبر پختونخوا پبلک ہیلتھ سرویلنس اینڈ ریسپانس آرڈیننس 2017ء کے نام سے تیارکردہ قانونی مسودے کے مطابق والدین یا پھر کسی خاندان کے سرپرست کو بھی اس بات کا پابند بنایا گیا ہے کہ اگر ان کے بچوں کو کوئی ایسی بیماری ہے جو دوسرے بچوں کو آسانی کیساتھ منتقل ہوتی ہے تووالدین یا سرپرست اپنے بچوں کی بیماری سے متعلق متعلقہ سکول کے پرنسپل، استاد یا مدرسے کے انچارج کو آگاہ کرے گا۔اس قانون کے تحت سرکاری اور نجی ہسپتال ،ریسٹورنٹس، سکول،مدارس اور نجی وسرکاری لیبارٹریز کو بیماری کی اطلاع کیلئے قانونی طور پابند ہوں گے جبکہ قانون کی خلاف ورزی پر6لاکھ روپے جرمانہ اور3سال قید کی سزا تجویز کی گئی ہے ۔