02-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے نادرا کے شناختی کارڈ اور مردم شماری کے فارم میں خواجہ سراوں کےلئے علیحدہ خانہ بنانے اور حکومت کی پالیسی دو فیصد کوٹہ کے تحت ملازمت دینے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں ۔

ٹرانز جینڈر ایسوسی ایشن کی جانب سے دائر رٹ درخواست میں عدالت کو بتایا گیا کہ سابق صوبائی وزیر سوشل ویلفیئر نے خواجہ سراوں کےلئے سرکاری ملازمتوں میں دو فیصد کوٹہ کا کہا تھا لیکن اس کے باوجود خواجہ سراوں کو سرکاری ملازمتیں نہیں دی جا رہی ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے مئی دوہزار بارہ کی پالیسی کے تحت خواجہ سراوں کو دو فیصد کوٹہ کے تحت ملازمتیں دی جائیں جبکہ نادرا کے شناختی کارڈ اور مردم شماری کے فارم میں خواجہ سراوں کےلئے علیحدہ خانہ مختص کیا جائے ۔

عدالت نے دائر رٹ پٹیشن نمٹا تے ہوئے حکومت کی پالیسی دو فیصد کوٹہ کے تحت خواجہ سراوں کو ملازمت دینے کے احکامات جاری کر دیئے ۔