05-05-2017

پشاور ہائی کور ٹ نے نیب کے افسر ضیاء اللہ طورو کی خیبر پختونخوا احتساب کمیشن میں ڈائریکٹر انوسٹی گیشن و مانیٹرنگ سیل کے انچارج کی تقرری کا نوٹیفیکشن  معطل کرتے ہوئے ان کی تعیناتی روک دی ۔

جسٹس قیصر رشید اور جسٹس محمد غضنفر خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ ضیاء اللہ طورو نیب میں بطور گریڈ اٹھارہ کے افسر تعینات ہیں جس کو صوبائی احتساب کمیشن میں گریڈ بیس کے آسامی پر ڈیپوٹیشن پر ڈائریکٹر انوسٹی گیشن اینڈ مانیٹرنگ سیل تعینات کر دیا گیا ہے جو کہ غیر قانونی ہے کیونکہ گریڈ اٹھارہ کے افسر کو اس عدہہ پر تعینات نہیں کیا جا سکتا لہذا ان کی تعیناتی کالعدم قرار دی جائے ۔

فاضل عدالت نے ضیاء اللہ طور و کا کام سے روکتے ہوئے ان کی تعیناتی کا نوٹی فیکیشن معطل کر دیا اور سماعت ملتوی کردی ۔