23-05-2017

خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں سرمایہ کاری ،معاہدے اور لین دین سے متعلق تنازعات کے فوری حل کے لئے اے ڈی آر کے کردار سے متعلق ایک روزہ سمینار منعقد کیا گیا جس میں صوبہ کے مختلف اضلاع میں تعینات ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز ، سینئر سول ججز ، سول ججز سمیت وکلاء ، ورلڈ بنک ، خیبر پختونخوا چیمبر آف کامرس اور صعنت کاروں نے نمائندوں نے شرکت کی ۔

افتتاحی تقریب میں ڈائریکٹر جنرل خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور محمد مسعود خان ، سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن محمد آصف خان ، ڈین فیکلٹی خواجہ وجہہ الدین ، سینئر ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ پبلی کیشن سہیل شیراز نور ثانی اور ڈائریکٹر انسٹرکشن ضیاء الرحمان سمیت دیگر نے شرکت کی ۔ ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے اپنے خطاب میں ایک روزہ سیمینار کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ اس ایک روزہ سیمینار سے کمیشن ڈیسپویٹ ریزولوشن سنٹر کے قیام کے لئے ہونے والے اقدامات میں مدد ملے گی ۔ انہوں نے کہا کہ تنازعات کے عدالتوں سے باہر حل کےلئے جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں میڈیشن سنٹر کا قیام دو ہزار تیرہ میں لیا گیا ہے اور یہ سیمینار اس وجہ سے بھی اہم ہے کہ ہمیں اس سے سفارشات مرتب کرنے میں مدد ملے گی ۔

ڈین فیکلٹی خواجہ وجہہ الدین نے سیمینار کے طریقہ کار اور مقاصد پر روشنی ڈالی جس کے بعد ریسورس پرسن عمیر محسن نے موضوع پر سیر حاصل لیکچر دیا اور سوال و جواب کا سیشن منعقد کیا گیا ۔ ریسورس پرسن وصال خان نے تناعات کے حل اور خیبر پختونخوا میں ڈی آر سی کے قیام کے موضوع پر لیکچر دیا ۔ ریسورس پرسن ورلڈ بنک کے ماہر  امجد بشیر  ، فرحت علی  نے مختلف موضوعات پر لیکچرز دیئے جبکہ سمینار کے آخری سیشن میں سفارشات مرتب کئے گئے ۔

سمینار کے اختتام پر ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی نے شرکاء میں اسناد بھی تقسیم کیں ۔