15-05-2017

خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں صوبہ کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے نوجوان وکلاء کےلئے تیسراپانچ روزہ تربیتی پروگرام کا آغاز ہو گیا ہے جو انیس مئی تک جاری رہے گا  اس پانچ روزہ تربیتی پروگرام میں شعبہ وکالت میں قدم رکھنے والے نئے وکلاء کے تیسرے بیچ کو تربیت دی جا رہی ہے ۔

پانچ روزہ تربیتی پروگرام کی افتتاحی تقریب خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں منعقد ہوئی جس میں ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمدمسعود خان ، سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن محمدآصف خان ، ڈین فیکلٹی خواجہ وجہہ الدین ، سینئر ڈائریکٹرریسرچ اینڈ پبلی کیشن شیراز نور ثانی اور ڈائریکٹر انسٹرکشن ضیاء الرحمان سمیت شرکاء ٹریننگ نے شرکت کی ۔

ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے اپنے خطاب میں شرکاء کو پانچ روزہ تربیتی پروگرام  کےلئے جودیشل اکیڈمی آمد پر خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ چیئرمین خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی کی خصوصی ہدایات کی روشنی میں صوبہ کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے نوجوان مرد و خواتین وکلاء کی تربیت کےلئے خصوصی کورس مرتب کیا گیا ہے۔

 جس کے تحت رواں سال تین سو نئے لاء گریجویٹس کو تربیت دی جائے گی ان کا کہنا تھا کہ پانچ ، پانچ دنوں پر محیط ان خصوصی تربیتی پروگرامز میں شعبہ وکالت میں قدم رکھنے والے نئے وکلاء کو مختلف پیشہ وارانہ امور کی عملی مشقیں کرائی جائیں گی اور یہ پانچ روزہ تربیتی پروگرام اس سلسلے کا تیسرا تربیتی پروگرام ہے ۔

ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے کا کہنا تھا کہ رواں سال جوڈیشل اکیڈمی پشاور نظام انصاف سے منسلک جملہ افراد و شعبہ ہاکے تجویز کردہ پندرہ سو نمائندوں کو تربیت فراہم کرے گی جن میں تین سو نئے وکلاء اور بارہ سو جج صاحبان ، پراسیکیوٹرز اور تفتیش کار شامل ہیں جن کی پیشہ وارانہ استعداد اور صلاحیتوں کو مزید نکھارا جا ئے گا ۔

 آج پانچ روزہ تربیتی پروگرام کے پہلے دن ریسورس پرسنز  شاہ فیصل اتمانخیل ایڈوکیٹ ، مسعود خان اور ڈائریکٹر انسٹرکشن جوڈیشل اکیڈمی ضیاء الرحمان نے مختلف موضوعات پر الگ الگ لیکچرز دیئے۔