28-07-2017

خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں جوڈیشل افسران کےلئے پانچ روزہ تربیتی پروگرام مکمل ہو گیا ہے ۔

کیس اینڈ کورٹ منجمنٹ کے موضوع پر ہونے والے پانچ روزہ تربیتی پروگرام میں صوبہ کے مختلف اضلاع  میں تعینات پچیس  سول ججز کم جوڈیشل مجسٹریٹس شریک ہوئے۔

آج پانچ روزہ تربیتی پروگرام کے پانچویں اور آخری دن  سینئر ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ پبلی کیشن خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور سہیل شیراز نور ثانی نے اے ڈی آر -چیلنجز اینڈ لیمیٹیشنز کے موضوع پر لیکچر دیا جبکہ ریسورس پرسنز نے شرکاء کی جانب سے کیس اینڈ کورٹ منجمنٹ سے متعلق مختلف سوالات کے جوابات دیئے ۔

بعد میں تربیتی پروگرام کی اختتامی تقریب منعقد ہوئی جس میں ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان ، سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن محمد آصف خان ، سینئر ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ پبلی کیشن سہیل شیراز نور ثانی ، ڈائریکٹر انسٹرکشنز  ضیاء الرحمان اور ہاجرہ رحمان سمیت ریسورس پرسز  ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جہانزیب شنواری ، اور نصرت یاسمین نے شرکت کی ۔

اختتامی تقریب سے اپنے خطاب میں ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی محمدمسعود خان نے شرکاء کو پانچ روزہ تربیتی پروگرام مکمل کرنے پر انہیں مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ قانون بنانے کا کام پارلیمنٹ کا ہے جبکہ ججز کا کام قانون کی پابندی اور اس کو لاگو کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جوڈیشل اکیڈمی پشاور  نے جوڈیشل افسران کےلئے جو کورسز مرتب کئے ہیں اس میں موجودہ  وقت کے تقاضوں کو مد نظر رکھا گیا ہے تاہم لوگوں کو فوری اور سستے انصاف کی فراہمی کے عمل کو مزید تقویت دی جا سکے ۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ اس تربیتی پروگرام سے شرکاء کے پیشہ وارانہ صلاحیتوں میں اضافہ ہوا ہوگا ۔ تقریب کے اختتام پر ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے تربیتی پروگرام مکمل کرنے والے پچیس سول ججز کم جوڈیشل مجسٹریٹس میں اسناد بھی تقسیم کیں۔

یا د رہے کہ خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور کورٹ اینڈ کیس منجمنٹ کے موضوع پر متعدد تربیتی پروگرامز منعقد کر چکی ہے جبکہ رواں سال کے ایل او اے میں اس موضوع پر یہ پہلا تربیتی پروگرام  تھاجو مکمل کیا گیا ہے۔