04-05-2017

خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں جوڈیشل افسران کےلئے فنانشل کرائمز کے موضوع پر دو روزہ خصوصی تربیتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں صوبے کے مختلف اضلاع میں تعینات تیس ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز اور ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز  شریک ہوئے ۔

دو روزہ خصوصی کورس کی اختتامی تقریب خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں منعقد ہوئی جس میں میں ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمدمسعود خان ، ڈین فیکلٹی خواجہ وجہہ الدین ، سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن محمد آصف خان ، سینئر ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ پبلی کیشن سہیل شیراز نور ثانی اور ڈائریکٹر انسٹرکشنز  ضیاء الرحمان سمیت دیگر افسران نے شرکت کی ۔

اختتامی تقریب سے اپنے خطاب میں ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے فنانشل کرائمز کے موضوع پر ہونے والے دو روزہ تربیتی پروگرام مکمل کرنے پر شرکاء کو مبارک باد دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ اس تربیتی پروگرام سے نہ صرف ان کی فنانشل کرائمز سے متعلق علم میں اضافہ ہوا ہوگا بلکہ فوری اور سستے انصاف کی فراہمی کے کاز کو مزید تقویت بھی ملے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ جوڈیشل اکیڈمی پشاور صوبے کے جوڈیشل افسران سمیت وکلاء اور نظام انصاف سے منسلک تمام سٹیک ہولڈرز کےلئے رواں سال مختلف تربیتی پروگرام منعقد کر رہی ہے اور موجودہ تربیتی پروگرام اس سلسلے کی ایک کڑی ہے ۔ ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے بتایا کہ فنانشل کرائمز  کے موضوع پریہ خصوصی کورس موضوع کے تمام پہلووں کو اجاگر کرنے کے ساتھ ساتھ اس کے سد باب کے لئے عملی اقدامات پر زور دیتا ہے ۔اس موقع پر کلاس ریپرنٹیٹو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سید کمال حسین شاہ نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس دورزہ تربیتی پروگرام سے فنانشل کرائمز سے متعلق ہمیں مفید اور گرانقدر علم حاصل ہوا ہے جو ہمارے پیشہ وارانہ زندگی میں کارآمد ثابت ہوگا۔ انہوں نے جوڈیشل اکیڈمی کی جانب سے نئے نئے کورسز کے تحت ٹریننگ پروگرامز کے انعقاد کو سراہا اور کہا کہ ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی سمیت اکیڈمی کے تمام افسران و سٹاف مبارک باد اور خراج تحسین کے مستحق ہیں۔

تقریب کے اختتام پر ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے شرکاء میں اسناد بھی تقسیم کیں ۔

واضح رہے کہ فنانشل کرائمز کے موضوع پر اپنی نوعیت کے پہلے دو روزہ تربیتی پروگرام میں ریسورس پرسن اظہر نعیم قرنی نے فنانشل کرائمز کی تاریخی پہلووں ، پاکستان میں اس کے لیگل فریم ورک ، ان لینڈ ریونیو، پاکستان پینل کوڈ ، بینکوں ، براہ راست ٹیکسز اور کمپنیوں میں اس جرم سے متعلق مختلف موضوعات پر جبکہ ریسورس پرسن عمران سہیل نے منی لانڈرنگ  سے متعلق مختلف موضوعات پر ، ریسورس پرسن محمد علی نے منی لانڈرنگ سے متعلق بین الاقوامی اور قومی قوانین ، ریسورس پرسن عمیر اسلام نے اینٹی منی لانڈرنگ جرائم کی انوسٹی گیشن ، پراسیکیوشن اور ٹرائل کے موضوع جبکہ ریسورس پرسن صفدر علی نے خانان اینڈ کالیا کیس ، ایچ ایس بی سی منی لانڈرنگ کیس اور بی سی سی آئی کیس کو بطور کیس سٹڈی لیکچرز دیئے ۔