18-09-2017

خیبر پختونخوا سروس ٹربیونل نے صوبائی اسمبلی کے سینئر افسر غلام سرور کو اگست دو ہزار سترہ سے ایڈیشنل سیکرٹری کی حیثیت سے سینارٹی دینے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

خیبر پختونخوا سروس ٹربیونل نے گریڈ انیس کے ایڈیشنل سیکرٹری غلام سرور کی جانب سے دائر اپیل کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار گیارہ مارچ انیس سو تریانوے کو بطور اسسٹنٹ سیکرٹری اسمبلی سیکرٹریٹ تعینات ہوئے اور بھرتی رولز کے تحت درخواست گزار سیریل نمبر ایک اور نصر اللہ سیریل نمبر دو پر تھا اور درخواست گزار نے اسی روز جبکہ نصر اللہ نے دو روز بعد حاضری کی۔ اسی طرح درخواست گزار کوگریڈ اٹھارہ میں ترقی ستائیس جولائی انیس سو اٹھانوے کو دی گئی جبکہ نصر اللہ کو پانچ سال بعد اس گریڈ میں ترقی دی گئی تاہم سینئر ترین ہونے کے باوجود درخواست گزار کو نظر انداز کرکے نصر اللہ کو ایڈیشنل سیکرٹری بنا دیا گیا حالانکہ اس پر درخواست گزار کا حق بنتا ہے اور پشاور ہائی کورٹ  تین مرتبہ اس حوالے سے درخواست گزار کی رٹ پٹیشن منظور کر چکا ہے ۔ٹربیونل نے دونوں جانب سے دلائل مکمل ہونے پر اپیل منظور کرکے غلام سرور کو اگست دو ہزار سات سے ایڈیشنل سیکرٹری کی حیثیت دینے کے احکامات جاری کردیئے ۔