03-04-2017

سپریم کورٹ نے خیبر پختونخوا سے پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی میاں ضیاء الرحمان کی رکنیت بحال کر دی اور حلقہ پی کے 54 میں ہونے والے ضمنی انتخاب  روکنے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار  کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف اپیل کی سماعت کی۔ عدالت نے حکم امتناع جاری کرتے ہوئے ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کردیا اور میاں ضیاء الرحمان کی اسمبلی کی رکنیت بحال کردی۔

 عدالت نے الیکشن کمیشن کو خیبرپختونخوا کے حلقہ 54 میں ضمنی انتخاب کرانے سے بھی روک دیا اور 10 مئی کو ہونے والے ضمنی الیکشن کا شیڈول بھی معطل کردیا۔ عدالت نے کیس کی سماعت دس اپریل تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ  پشاور ہائی کورٹ نے جعلی ڈگری کی بنیاد پر میاں ضیاء الرحمان کو نااہل قرار دیا تھا۔