04-04-2018

 پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا کمیشن ان سٹیٹس آف ویمن میں ڈائریکٹر پروگرام کی تقرری کے خلاف دائر رٹ درخواست پر سیکرٹری سوشل ویلفیئر اور کمیشن کی چیئرپرسن کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس سید افسرشاہ پر مشتمل د ورکنی بنچ نے درخواست گزار جیندر کوارڈی نیٹرعطیہ زاہد کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ خیبر پختونخوا کمیشن آن سٹیٹس آف ویمن کےلئے ڈائریکٹر پروگرام کی گریڈ انیس کی پوسٹ مشتہر کی جس کے لئے درخواست گزارہ نے مطلوبہ کوائف مکمل ہونے پر درخواست دی اورشارٹ لسٹ بھی ہوئی تاہم میرٹ پر پورا اترنے کے باوجود اسے نظر انداز کرکے اس پوسٹ پر دوسری خاتون کی تقرری عمل میں لائی گئی حالانہ اس کا درخواست گزارہ سے تجربہ بھی کم تھا اور کمیشن کے تقرری کےلئے وضع کردہ رولز کے برعکس اس کی تقرری کی گئی ہے لہذا اس کی تقرری کا اقدام غیر قانونی اور کالعدم قرار دیا جائے ۔