09-06-2017

پشاور ہائی کورٹ نے صوبہ بھر کے کالجوں اور جامعات کے ملازمین کے بچوں کے لئے مختص کوٹہ کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی عائد کر دی ہے جبکہ فاٹا اور پسماندہ علاقوں سمیت معذور طلباء کے لئے کوٹہ مخصوص رکھنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس محمد غضنفر خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار نے میٹرک امتحانات میں اچھے نمبرز حاصل کئے ہیں تاہم اسے اسلامیہ کالج میں داخلہ نہیں مل رہا اور اس کے برعکس کالج انتظامیہ اور ملازمین کے بچوں کو کم نمبرز پر بھی باآسانی داخلہ مل جاتا ہے ۔ عدالت کو بتایا گیا کہ پشاور یونیورسٹی سمیت صوبہ بھر کے کالجز اور جامعات میں بھی سٹاف ممبرز کےبچوں کے لئے خصوصی سیٹیں مختص  کی گئی ہیں جو کہ غیر قانونی اقدام ہے