20-06-2017

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے دہشت گردی اور بارود رکھنے کے الزام میں گرفتار ملزم کو جرم ثابت ہونے پر اٹھائیس سال قید بامشقت کی سزا سنادی ہے جبکہ کیس میں نامزد دوسرے ملزم کو جرم ثابت نہ ہونے پر بری کر دیا ہے ۔

استعاثہ کے مطابق یکہ توت پشاور کے رہائشی ملزمان ضیاء اللہ اور عظیم خان پر الزام ہے کہ وہ خیبر ایجنسی سے بارود لیکر پشاور داخل ہو رہے تھے کہ بہادر کلے کے قریب سی ٹی ڈی اہلکاروں نے انہیں گرفتار کیا اور ان کے قبضے سے چھ سو تیس گرام بارودی مواد برآمد کیا ۔

عدالت نے ٹرائل مکمل ہونے پر ملزم ضیاء اللہ کو جرم ثابت ہونے پر دہشت گردی کے مقدمہ میں چودہ سال اور بارودی مواد برآمد ہونے پر بھی چودہ سال قید کی سزا سنا ئی اور مقدمہ کے معاون ملزم عظیم خان پر جرم ثابت نہ ہونے پر اسے مقدمہ سےباعزت بری کرنے کا حکم دیا۔