07-07-2017

پشاور ہائی کورٹ نے رکن صوبائی اسمبلی حلقہ پی کے ون پشاور ضیاء اللہ آفریدی کے حلقے کے ترقیاتی منصوبے سالانہ ترقیاتی پروگرام سے ڈراپ کرنے پر سیکرٹری پی اینڈ ڈی سے جواب طلب کرلیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس عبد الشکور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے رکن صوبائی اسمبلی کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزار کے حلقے میں متعدد ترقیاتی منصوبوں کی باقاعدہ منظوری کے بعد سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کئے گئے تھے تاہم وزیر اعلی کی ہدایت پر اب اے ڈی پی سے ان منصوبوں کو ڈراپ کر دیا گیا ہے ۔

عدالت نے سیکرٹری پی اینڈ ڈی کو طلب کرتے ہوئے اس بات کی وضاحت طلب کی کہ اسمبلی سے منظور شدہ سکیمیں کیوں ڈارپ ہوئیں۔ ان احکامات کے بعد فاضل عدالت نے کیس کی مزید سماعت گیارہ جولائی تک ملتوی کردی ۔