16-11-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ریپڈ بس منصوبے کے خلاف دائر دو رٹ درخواستوں کی سماعت اکیس نومبر تک ملتوی کرتے ہوئے ایڈوکیٹ جنرل اور ڈائریکٹر جنرل انوائرمنٹل پروٹیکشن ایجنسی سے عدالت میں اپنے دلائل دینے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے  درخواست گزارمولانا امان اللہ حقانی اور عابد ظریف کی جانب سے دو الگ الگ رٹ درخواستوں کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ یہ منصوبہ ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے دائرہ اختیار میں آتا ہے اور قانون کے تحت انہیں ہی پراجیکٹ شروع کرنا ہے لیکن صوبائی حکومت نے ضلعی حکومت کو مکمل طور پر نظر انداز کر دیا ہے جبکہ ماحولیاتی رپورٹ بھی حتمی نہیں ہے اور یہ عبوری طور پر حاصل کی گئی ہے ۔