02-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے سابق صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن لیاقت شباب کی عبوری ضمانت کی توثیق کر دی ہے ۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس یونس تہیم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر  رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ صوبائی احتساب کمیشن نے درخواست گزار سابق صوبائی وزیر لیاقت شباب کو غیر قانونی اثاثے بنانے کے الزام میں اٹھائیس مئی دو ہزار پندرہ کو گرفتار کیا تھا تاہم پشاور ہائی کورٹ نے درخواست گزار کو دو جولائی دو ہزار پندرہ میں عبوری ضمانت پر رہا کرنے کے احکامات جاری کئے تھے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ درخواست گزار کے خلاف تاحال کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہیں کیا گیا ہے اس لئے اس کی ضمانت کی توثیق کی جائے ۔

عدالت نے دو طرفہ دلائل مکمل ہونے پر سابق صوبائی وزیر لیاقت شباب کی ضمانت کی توثیق کر دی ۔