09-08-2017

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سپریم کورٹ سے نااہل قرار دیئے گئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی اسلام آباد سے لاہور  ریلی رکوانے سے متعلق دائر 2 درخواستوں پر قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ سناتے ہوئے دائر درخواستوں کو ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کردیئے ہیں۔
اسلام آباد ہائی کورٹ میں نواز شریف کی ریلی روکنے سے متعلق دو متفرق درخواستیں دائر کی گئی تھیں۔ پی ٹی آئی رہنما عثمان بسرا کی دائردرخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ عدلیہ نے جب فیصلہ دے دیا تو ریلی کا کوئی جواز نہیں بنتا اس لیے نواز شریف کو ریلی سے روکا جائے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر کمال نے درخواست پر منگل کو فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔

دوسری درخواست آل پاکستان مسلم لیگ کے کارکن وحید کمال کی جانب سے دائر کی گئی تھی جس میں وزارت داخلہ، ڈی جی آئی بی، چیف کمشنر اسلام آباد سمیت دیگر کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا کہ نواز شریف کی عدالتی نا اہلی کے بعد وہ سیاسی سرگرمیوں میں حصہ نہیں لے سکتے اس لیے انہیں ریلی کے ساتھ جانے سے روکا جائے جبکہ ریلی کے دوران پی ٹی آئی اور مسلم لیگ کے کارکنان میں تصادم بھی ہو سکتا ہے۔