14-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے نیب کو سابق پیسکو چیف پرویز اختر شاہ کے خلاف غیر قانونی اثاثہ جات کیس   کی کاروائی  روکتے ہوئے نیب حکام سے جواب طلب کر لیاہے۔

جسٹس مسرت ہلالی او رجسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ نے سابق پیسکو چیف کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار کو ٹرائل کورٹ نے ایک دفعہ بری کیا تھا تاہم نیب نے ملزم کے خلاف  غیر قانونی اثاثہ جات اور بدعنوانی کا کیس بنا کر دوبارہ ٹرائل شروع کروایا حالانکہ اس کیس کی پہلے سے ہائی کورٹ میں کاروائی جاری ہے اس لئے نیب کو دوبارہ کاروائی کا اختیار حاصل نہیں۔ اس طرح نیب نے ملزم کے خلاف اب غیر قانونی اثاثہ جات کا نیا کیس احتساب عدالت میں دائر کیاہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ درخواست گزار کے خلاف نیب کی کاروائی کالعدم قرار دی جائے ۔

عدالت نے نیب کو کاروائی سے روکتے ہوئے اس ضمن میں جواب طلب کرلیا۔