06-06-2018

سپریم کورٹ نے سابق چیف جسٹس پاکستان  افتخار محمد چوہدری کے ساتھ بدسلوکی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے ٹرائل کورٹ کا فیصلہ برقرار رکھنے  کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں  سپریم کورٹ کے  5 رکنی بنچ نے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے خلاف بدسلوکی کیس کی سماعت کی۔

فاضل عدالت نے اسلام آباد کے سابق آئی جی پولیس چوہدری افتخار سمیت 7 افسران کی جانب سے دائر کی گئی اپیلوں کو مسترد کرتے ہوئے ٹرائل کورٹ کا فیصلہ برقرار رکھنے کا حکم دیا۔

واضح رہے کہ 2007 میں اس وقت کے چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کو گھر سے عدالت آتے وقت روکا گیا تھا جبکہ پولیس نے ان کے ساتھ انتہائی برا سلوک روا رکھا گیا تھا۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے 13 مارچ 2007 کو اس وقت کے چیف جسٹس کے ساتھ بدسلوکی کرنے کے کیس میں سزایافتہ وفاقی انتظامیہ اور پولیس کے سابق سینئر افسران کی جانب سے دائر انٹرا کورٹ اپیلوں پر سماعت کی تھی۔