07-06-2017

پشاور ہائی کورٹ  نے سانحہ آرمی پبلک سکول کے شہید طالب علم کے والد کا بیان قلم بند کرنے کےلئے دائر رٹ درخواست پر وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے جواب طلب کر لیا ہے

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس محمد غضنفر خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے فضل خان ایڈوکیٹ کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ سولہ دسمبر دو ہزار چودہ کو آرمی پبلک سکول پشاور کے دہشت گردانہ حملے میں شہید ہونے والے طلباء میں اس کا بیٹا صاحبزادہ عمر خان بھی شامل تھا لیکن تاحال ایک متاثرہ والد ہونے کے باوجود انہیں پولیس اپنا بیان قلم بند کرنے نہیں دے رہی ہے حالانکہ یہ اس کا قانونی حق ہے ۔