28-03-2017

پشاورہائی کورٹ نے محکمہ تعلیم میں سبجیکٹ سپیشلسٹ کی ترقی کا عمل روکتے ہوئے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ اور سیکرٹری ایجوکیشن خیبر پختونخوا کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس لعل جان خٹک اور جسٹس سید عتیق شاہ پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے

دائَر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار ایس ایس ٹی تعینات ہے جس کا سبجیکٹ سپیشلسٹ کی حیثیت سے ڈی پی سی میں نام آچکا ہے تاہم محکمانہ ترقی کمیٹی نے نئی سینارٹی لسٹ بنائی ہے جبکہ قانونی طور پر دو ہزار نو کے ریگولرائزیشن ایکٹ کے تحت مستقل ہونے والے امیدواروں کی مستقلی کے بعد کی لسٹ کے تحت سینارٹی لسٹ مرتب کرنی چاہیئے اور محکمانہ ترقی کمیٹی نے جو سات سو اکسٹھ امیدواروں کی جو فہرست مرتب کی ہے وہ غیر قانونی ہے اس لئے اسے کالعدم قرار دیا جائے ۔

عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد حکم امتناعی جاری کرکے متعلقہ حکام سے جواب طلب کر لیا اور سماعت اگلی تاریخ تک ملتوی کردی ۔