19-01-2017

پشاور ہائی کورٹ نے تاحکم ثانی تمام سرکاری رہائش گاہوں کی الاٹمنٹ پر پابندی لگاتے ہوئے محکمہ ایڈمنسٹریشن سے جواب طلب کرلیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاو رہائی  کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزاروں کو تعلق  مختلف سرکاری محکموں سے ہیں جنہوں نے کئی سال پہلے سرکاری رہائش گاہوں کی الاٹمنٹ کےلئے درخواست دی تھی لیکن اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ نے میرٹ کے برعکس من پسند اور سیاسی اثر رسوخ والے افراد کو بغیر سینیارٹی کے گھر الاٹ کئے جبکہ درخواست گزار پرائیویٹ گھروں میں رہائشی اختیار کرنے پر مجبور ہیں لہذا درخواست گزاروں کو سرکاری گھر الاٹ کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

عدالت نے تاحکم ثانی تمام سرکاری رہائش گاہوں کی الاٹمنٹ روکتے ہوئے محکمہ ایڈمنسٹریشن سے اس ضمن میں جواب طلب کرلیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔