05-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے صوبے کے بڑے ہسپتالوں میں میڈیکل ویسٹ کو ٹھکانے لگانے کے آلات کی عدم دستیابی پر لیڈی ریڈنگ ہسپتال اور خیبر ٹیچنگ ہسپتال کے ڈائریکٹرز اور رحمان میڈیکل انسٹی ٹیوٹ اور نارتھ ویسٹ ہسپتالوں کے چیف ایگزیکٹوز کو اٹھارہ مئی کو عدالت طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس روح الاآمین خان پر مشتمل دورکنی بنچ نے دائررٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ صوبے کے بڑے ہسپتالوں میں بھی استعمال شدہ میڈیکل الات کو ٹھکانے لگانے کےلئے کوئی انتظام موجود نہیں ہے جس کی وجہ سے بیماریاں پھیلنے کا خدشہ ہے ۔

دوران سماعت ڈائریکٹر جنرل ماحولیات ڈاکٹر بشیر نے عدالت کو بتایا کہ صرف حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں یہ سہولت موجود ہے جبکہ باقی کسی بھی ہسپتال میں نہیں ہے جس کے لئے ڈپٹی کمشنر سے رابطہ کیا گیا ہے اور ان ہسپتالوں کے انتظامیہ کے خلاف کاروائی کی جائے گی ۔ عدالت نے دائررٹ کی سماعت اٹھارہ مئی تک ملتوی کرتے ہوئے ان ہسپتالوں کے متعلقہ حکام کو عدالت طلب کر لیا۔