13-03-2017

سپریم کورٹ نے سندھ پبلک سروس کمیشن کےزیراہتمام2013 سے2016 تک ہونے والے تمام امتحانات کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔

سپریم کورٹ کے تین روکنی بنچ کے رکن جسٹس مظہر عالم میاں خیل نے کیس کا فیصلہ پڑھ کر سنایا۔

جسٹس امیر ہانی مسلم کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت مکمل کرنے کے بعد 22 فروری کو فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔

 جاری کردہ سپریم کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ دو ہزار تیرہ اور دوہزار سولہ کے عرصے کے دوران ہونے والے امتحانات میں شریک امیدوار دوبارہ امتحان دیں گے۔

 واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے سند ھ  پبلک سروس کمیشن ممبران کی غیر قانونی تقرری پر ازخود نوٹس لیا تھا اور از خود نوٹس لینے پر کمیشن کے چیئرمین اور ممبران مستعفی ہوگئے تھے ۔