05-09-2017

سندھ ہائی کورٹ میں مردم شماری کے نتائج کے خلاف آئینی درخواست دائر کر دی گئی ہے۔

رپورٹس کےمطابق  درخواست گذار اقبال کاظمی نے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ مردم شماری کے سرکاری نتائج کسی طور پر درست نہیں ہیں۔ زبان، نسل اور مذہب کی بنیاد پر حقوق سلب نہیں ہونے چاہیں۔ اس لئے فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ عدالتی کمیشن کی زیر نگرانی مردم شماری کرائی جائے، مشترکہ مفادات کونسل کا مستقل سیکریٹریٹ قائم کر کے مردم شماری کرائی جائے۔ مردم شماری کے نتائج پر عدالتی فیصلے تک عام انتخابات نہ کرائے جائیں۔

دائر درخواست میں چیئرمین مشترکہ مفادات کونسل، سیکرٹری وزارت اعدادوشمار اور چیف سیکرٹری سندھ کو فریق بنایا گیا ہے۔