23-05-2017

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج پشاور نے بیس لاکھ روپے قرض دے کر سود کی مد میں چوبیس لاکھ روپے اضافی طلب کرنے کے الزام میں ملوث ملزم کی عبوری ضمانت منسوخ کر دی جس پرمتعلقہ پولیس نے اسے گرفتار کر لیا ۔

مدعی مقدمہ کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ملزم جمشید پر الزام ہے کہ اس نے مدعی مقدمہ کے بھائی خان زیب کو بیس لاکھ روپے ادھار دیئے تھے اور بعد میں اس سے چوبیس لاکھ روپے سود سمیت چوالیس لاکھ روپے کی واپسی کا مطالبہ کر رہا تھا جس پر پولیس نے ملزم کے خلاف سود ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا اور ملزم نے عبوری ضمانت حاصل کر رکھی ہے تاہم ملزم کسی رعایت کا مستحق نہیں لہذا اس کی عبوری ضمانت منسوخ کی جائے ۔

فاضل عدالت نے دونوں جانب سے دلائل مکمل ہونے پر ملزم کی عبوری ضمانت منسوخ کر دی جس پر ملزم کو احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا ۔