31-03-2017

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کیس کو نمٹاتے ہوئے مختصر فیصلہ جاری کردیا ہے۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے 3 صفحات پر مشتمل تحریری حکمنامہ جاری کیا۔عدالت نے فیصلے میں ہدایت جاری کی کہ ایف آئی اے قانون کے مطابق تحقیقات جاری رکھے،5 بلاگرز کو ٹھوس شواہد کی موجودگی میں ملک واپس لایا جائے،ایف آئی اے گستاخانہ مواد کی نئی درخواست پر کارروائی کرے۔

عدالت نے ہدایت جاری کی کہ گستاخانہ مواد پر مشتمل پیجز کے خلاف میکنزم بنایا جائے،پی ٹی اے سوشل میڈیاپر گستاخانہ مواد روکنے کا طریقہ کار طے کرے جبکہ انسداد الیکٹرانک کرائم ایکٹ 2016 ء میں ایک ماہ میں ترمیم کی جائے،گستاخانہ موادختم کرنے کیلئے پینل یا کمیٹی تشکیل دی جائے۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ہدایت جاری کی کہ ملوث این جی اوز کیخلاف کارروائی کی جائے اورگستاخانہ اور فحش مواد سے متعلق پی ٹی اے کو قانونی سزاؤں کی آگاہی عوام کو دے عدالت نے کہا کہ  سیکرٹری داخلہ کارروائی کیلئے کمیٹی تشکیل دے سکتے ہیں۔