25-07-2017

پشاور ہائی کورٹ نے پبلک سروس کمیشن خیبر پختونخوا کی سفارشات کی روشنی میں صوبہ کے مختلف اضلاع میں تعینات ہونے والے سو سے زائد سول ججوں کی تقرری کے خلاف دائررٹ درخواست کو قابل سماعت قرار دیتےہوئے رٹ کی سماعت کے لئے تئیس اگست کی تاریخ مقرر کر دی ہے ۔

جسٹس لعل جان خٹک اور جسٹس عبدالشکور پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے آٹھ درخواست گزاروں کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ پبک سروس کمیشن خیبر پختونخوا نے ایک سو سات سول ججوں کی تقرری کی ہے تاہم جن امیدواروں کے تحریری ٹیسٹ میں نمبر زیادہ آئے تھے انہیں انٹرویو میں فیل کیا گیا اور انٹرویو کا ریکارڈ معائنہ کیا گیا تو قوانین کے تحت انٹرویو کے پینل میں چھ افراد تھے تاہم نمبر ایک ہی فرد کی جانب سے دیئے گئے ہیں جو کہ غیر قانونی اور غیر آئینی اقدام ہے لہذا اس اقدام کو کالعدم قرار دیا جائے ۔فاضل عدالت نے ابتدائی سماعت کے بعد دائر رٹ پٹیشن کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے حتمی دلائل کےلئے تئیس اگست کی تاریخ مقرر کر دی ۔