11-08-2017

سپریم کورٹ میں سندھ اسمبلی کی جانب سے قومی احتساب بیورو آرڈیننس 1999 منسوخی ایکٹ 2017 کو چیلنج کر دیا گیا ہے۔

درخواست گزار ایڈووکیٹ نثار احمد کی جانب سے دائر درخواست  موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نیب قانون کو آئین کے آرٹیکل 270 اے کے تحت تحفظ حاصل ہے، سندھ اسمبلی کو نیب قانون کی منسوخی کا اختیار نہیں، قومی احتساب بیورو آزاد اور خود مختار ادارہ ہے، قومی احتساب بیورو کے قانون میں تبدیلی یا منسوخی پارلیمنٹ کا اختیار ہے، نیب قانون کو ختم کر کے کرپشن کا کھلا لائسنسن دے دیا گیا، نیب قانون منسوخی کی قانون سازی بنیادی حقوق کے منافی ہے۔

دوسری طرف نیب آرڈیننس 1999کے خاتمے کا اقدام سندھ ہائی کورٹ میں بھی چیلنج کردیا گیا ہے۔سندھ ہائی کورٹ میں ایم کیو ایم اور فنکشنل لیگ سمیت چھ درخواست گزار وں نے  دائر الگ الگ رٹ درخواستوں میں موقف اختیار کیا ہے کہ وفاقی قانون کی موجودگی کے باوجود سندھ حکومت نے نیب قانون کا بل پاس کر کے قانون بنا یا ہے جو کہ آئین کے آرٹیکل 143کی خلاف ورزی ہے ۔