29-05-2017

سپریم کورٹ میں بھارتی جاسوس کلبھوشن یادو کی پھانسی کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی ہے، درخواست مزمل ایڈوکیٹ نے فاروق ایچ نائیک کی وساطت سے دائر کی ہے۔

درخواست میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ایجنٹ کلبھوشن یادو نے اپنے بیان میں اعتراف کیا ہے کہ وہ پاکستان کے خلاف منفی سرگرمیوں میں ملوث رہا ہے اور اسے فوجی عدالت سے سزائے موت بھی سنائی جاچکی ہے اور مجرم نے اپنی سزا کے خلاف اپیل دائر نہیں کی تو پھانسی کی سزا پر عمل درآمد کا حکم دیا جائے اور اگر اس نے اپیل دائر بھی کی ہے تو قانون کے مطابق جلد فیصلہ کیا جائے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اپنی سالمیت، خودمختاری اور وقار سے متعلق تمام فیصلوں میں آزاد ہے لہذٰا عالمی عدالت انصاف کا حکم ماننا پاکستان پر لازم نہیں اور نا ہی کلبھوشن کو قونصلر رسائی نہ دینا کسی بھی قانون کی خلاف ورزی ہے۔ درخواست میں وفاق، وزارت قانون اور ایپلٹ کورٹ کو فریق بنایا گیا ہے۔