14-04-2018

سپریم کورٹ نے ریلوے کا مکمل آڈٹ کرانے کا حکم دے دیا ہے۔

 سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں ریلوے میں 60 ارب روپے خسارے کے از خود نوٹس کی سماعت چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار  کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے کی۔ وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق عدالت میں پیش ہوئے۔

وفاقی وزیر نے خسارے سے متعلق عدالت کو بتایا ریلوے کا ریونیو 50 ارب اور خسارہ 35 ارب کے قریب ہے ، نقصانات کی بہت ساری وجوہات ہیں ، آپ آڈٹ کرائیں گے تو ہماری کارکردگی سے مطمئن ہو جائیں گے۔ چیف جسٹس نے کہا تو کیا عدالت پھر آپکو انتخاب لڑے بغیر 12 سال کیلئے ریلوے کا وزیر مقرر کر دے ؟ آپ کے دور میں کئی حادثے ہوئے ، فوجی ٹرین حادثے میں کتنے افراد شہید ہوئے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے آپ نے بھی ساری ذمہ داری ڈرائیور پر ڈال دی ، پہلی مرتبہ قانون کی بالا دستی نظر آرہی ہے جس سے لوگوں کو تکلیف ہو رہی ہے۔ عدالت نے پاکستان ریلوے کا مکمل آڈٹ کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔