18-08-2017

سپریم کورٹ نے غیرت کے نام پرقتل کرنے والے 2ملزمان کو12سال بعد بری کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے غیرت کے نام پرقتل کے ملزمان کی بریت کی درخواست کی سماعت کی۔جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ پولیس نے مدعی یاملزم کی حمایت نہیں کرنا ہوتی بلکہ سچ کو تلاش کرنا ہوتا ہے، خرابی یہ ہے کہ پولیس مدعی کے ساتھ مل جاتی ہے۔ بنچ کے رکن جسٹس قاضی فائزعیسی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پولیس قتل کے مقدمات میں پیسے لے کرکیس خراب کرتی ہے۔

  واضح رہے کہ ٹرائل کورٹ نے ملزمان کو سزائے موت سنائی جبکہ ہائی کورٹ نے عمرقید کی تبدیل کردی تھی۔