17-10-2017

سپریم کورٹ کے جج جسٹس آصف سعید کھوسہ  نے کہا ہے کہ سچی گواہی کے بغیر نظام عدل نہیں چل سکتا جبکہ جھوٹی گواہی دینا اصل ظلم ہے۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بنچ نے سزائے موت کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پر  عدالت نے ریمارکس دیئے کہ پولیس ملزم تک پہنچ جاتی ہے مگر جھوٹے گواہ بنائے جاتے ہیں  اور پھر کہتے ہیں کہ عدالت نے انصاف نہیں کیا تاہم سچی گواہی کے بغیر نظام عدل نہیں چل سکتا۔  عدالت نے کہا کہ جھوٹی گواہی دینا اصل ظلم ہے، اللہ کا حکم ہے کہ سچی گواہی دو،اللہ تعالیٰ سب کچھ جانتا ہے مگر پھر بھی شہادت مانگی جاتی ہے۔