18-08-2017

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی  آفریدی نے کہا ہے کہ سیاحتی مقامات ہمارا قومی ورثہ ہے ہر شہری کو اس کا خیال رکھنا اور اس ورثے کا تحفظ کرنا چاہیئے ۔

خیبر پختونخوا کےسیا حتی مقامات کاغان ، ناران میں صفائی کی ابتر صورتحال اور دیگر سہولیات کے فقدان سے متعلق دائر رٹ درخواست کی سماعت کے دوران چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ کو بتایا گیا کہ این ایچ اے نے نارا ن میں ایک پلازہ تعمیر کیا ہے جس سے وہاں کی خوبصورتی متاثر ہونے کے ساتھ ساتھ ماحولیاتی مسائل بھی جنم لے رہے ہیں جبکہ صفائی کی صورتحال بھی ابتر ہے ۔

دوران سماعت چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ نے پیش ہونے والے متعلقہ افسران پر زور دیا کہ وہ اس حوالے سے بحیثیت ایک ذمہ دار شہری کے اپنے فرائض پورے کرتے ہوئے کاغان اور ناران کی خوبصورتی کےلئے اقدامات اٹھائے اور ایسے اقدامات کی خوصلہ شکنی بھی کرے جس سے یہ قومی ورثہ کو نقصان پہنچ رہا ہو۔ عدالت نے ایڈوکیٹ جنرل  خیبر پختونخوا کو ہدایت کی کہ وہ اس مسئلے کو صوبائی حکومت کے ساتھ اٹھائیں جبکہ عدالت نے کمشنر ہزارہ ، ڈی آئی جی ہزارہ ، چیئرمین انوائر منٹل پروٹیکشن ایجنسی اور ڈپٹی ڈائریکٹر کاغان ڈیویلپمنٹ اتھارٹی پر مشتمل ایک اعلی سطحی کمیٹی بھی تشکیل دی جو کہ ایک ماہ میں اس حوالے سے سفارشات مرتب کرے گی ۔ ان احکامات کے ساتھ ہی فاضل عدالت نے کسی کی مزید سماعت اکیس ستمبر تک ملتوی کردی ۔