13-03-2017

سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ جج ایمانداری سے کام کریں تو اُن پر انگلی نہیں اٹھے گی،پہلے ماتحت عدلیہ کا فوکس صرف سزا دینا ہوتا تھا اب ہر سال 30 ہزار ضمانتیں لاہور ہائی کورٹ آتی ہیں ۔

لاہور کی جوڈیشل اکیڈمی میں کریمنل جسٹس سسٹم کے پائلٹ پروجیکٹ کی تقریب سے اپنےخطاب میں جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ کیس مشکوک ہو تو بھی قتل کیس میں عمر قید دے دی جاتی ہے ، اب ماتحت عدلیہ کی صورتحال تبدیل ہورہی ہے۔

اس موقع پر لاہورہائی کورٹ کے چیف جسٹس سید منصورعلی شاہ کا کہنا تھا کہ اگر ریگولر عدالتیں مقدمات کا فیصلہ کرتیں تو خصوصی عدالتوں کی ضرورت نہ پڑتی ۔جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہاکہ ماڈل پروجیکٹ سے مقدمات نمٹانے میں بہتری آئی ہے۔