02-10-2017

سینٹ سے منظور ہونے والے انتخابی اصلاحات بل کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا گیا ہے۔

 دائر رٹ درخواستوں میں وفاقی سیکریٹری قانون اور پارلیمانی امور،الیکشن کمیشن، پاکستان مسلم لیگ ن اور میاں نوازشریف کو فریق بنایا گیا ہے۔

 درخواستوں میں موقف اختیارکیا گیا ہے کہ نواز شریف کو سپریم کورٹ نے نا اہل قرار دیا ہے، وہ پارٹی صدارت کے اہل نہیں ہیں۔ انہیں پارٹی سربراہ بنانے کے متوقع عمل کو غیر آئینی قرار دیاجائے جبکہ  سینٹ سے منظور ہونے والے انتخابی اصلاحات بل کو غیر آئینی قرار دیا جائے۔