16-11-2017

پشاور ہائی کورٹ نے مختلف سی این جی سٹیشنز سے 4فیصد ایڈوانس ٹیکس کی وصولی روک دی اور متعلقہ حکام سے جواب طلب کرلیا ہے۔

 جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس غضنفر علی  پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواستوں کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیا  کہ ایس این جی پی ایل حکام سی این جی سٹیشن مالکان سے 4فیصد ایڈوانس ٹیکس وصول کر رہے ہیں حالانکہ یہ اقدام غیر قانونی ہے کیو نکہ اس کے موکل مختلف قوانین کے تحت ٹیکس دے رہے ہیں اور یہ ٹیکس غیر قانونی طور پر وصول کیا جا رہا ہے جس سے یہاں کی معیشت بری طرح متاثر ہو رہی ہے اور سرمایہ کار بھی خیبرپختونخوا آنے سے کتراتے ہیں جس پر عدالت نے ٹیکس کی وصولی روک دی اور وفاقی حکومت سمیت دیگر اداروں سے جواب طلب کرلیا ۔