27-09-2017

پشاور ہائی کورٹ نے پاک چین اقتصادی راہداری کے مغربی روٹ پر ترقیاتی منصوبے شامل کرنے کےلئے دائر رٹ پر  وفاقی حکومت کے متعلقہ حکام سے تحریری جواب طلب کرلیا ہے۔

چیف جسٹس پشاورہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس روح الاامین پر مشتمل دو رکنی بنچ نے سپیکر صوبائی اسمبلی اسد قیصر کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ صوبائی حکومت نے سی پیک کے مغربی روٹ کےلئے بعض منصوبوں کی منظوری دی تھی تاہم بعد میں ان منصوبوں کو سی پیک میں شامل نہیں کیا گیا جبکہ اس کے شامل کرنے کے حوالے سے صرف سیاسی بیان دیئے گئے ہیں لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ وفاقی حکومت اس حوالے سے مفصل جواب عدالت میں داخل کرے کہ یہ منصوبے سی پیک میں شامل ہیں یا نہیں ہیں ۔